آج کی آیت پر خیالات

جب یہ الفاظ پہلے کہے گئے، یہ خُدا کی طرف سے اسرائیل کو اُس کی جگہ، عہد، زندگی اور مقدس مقام میں بحالی کےلیے ادا کیے گئے۔ ہمارے پُرانے نقطہ نظر سے ، یہ دُعا ہماری بھی ہونی چاہیئے۔ بحالی کا مطلب یسُوع کا آنا بھی ہو سکتا ہے جو ہمیں گھر لے جائے گا۔ اُس دن، ہمارے اور خُدا کے درمیان جو بھی مشکل ہو گی ہٹ گائے گی۔ ہماری فنا پذیری فتح میں تبدیل ہو جائے گی۔ ہم خُدا کو رُو برُو دیکھیں گے اور اُس کے کامل فرزند ہونے کےناطے ٹھنڈے وقت میں اُس کے ساتھ سیر کیا کریں گے۔ وہ دن جلد آئے۔

میری دعا

پاک اور شاندار خُدا، میں جانتا ہوں کہ میری حدود اور تیری کاملیت کے درمیان بہت بڑی خلیج حائل ہے۔ چنانچہ پیارے خُدا،میرا ایمان ہے کہ تُو نے اپنے پیار کے ساتھ اُس خلیج کو پھیلا دیا ہے۔ جبکہ میں اُس کاملیت کے انتظار میں ہوں جو پوری طرح روشنی پھیلائے، مجھے براہِ کرم بدی کے ساتھ معرکہ آرائی میں قوت بخش اور مجھے تمام رُوحانی حملے اور نقصان سے بچا۔ اُس دن تک جب میں تجھے رُو برُو نہ دیکھ لُوں تُو نے مجھے بچانے کےلیے جو کچھ کیا ہے اُس کےلیے میری انسانی محدود حمد کو قبول فرما۔ یسُوع کے نام میں مانگتا ہوں۔ آمین۔

آج کی آیت پر دعا اور خیالات فل وئیر لکھتے ہیں

اظہارِ خیال