آج کی آیت پر خیالات

آہ! "سنہری اصول" بہت سیدھا ہے، کیا ایسا نہیں ہے؟ بعض اوقات ہم چیزیں بناتے ہیں، خاص کر مذہبی چیزیں، جو کہ بہت پچیدہ اور مشکل ہوتی ہیں۔ مجھے بائبل سے اِس لیے پیار ہے کہ جب خُدا رویے کے بارے میں بات کرتا ہے تو یہ اکثر بہت عملی اور سیدھی ہے۔ کیا آپ یہ جاننا چاہتے ہین کہ کسی کے ساتھ کیسا سلوک کرنا چاہیئے؟ تو اُن کےساتھ وہ کرو جو برکت کا وسیلہ ہو اگر ایسا تہمارے ساتھ بھی کیا گیا ہو! اگر یہ ہمت، برکت، بڑھاوے، مدد، تسلی، یا آپ کی مدد کے لیے نہ ہو ، تو پھر اُن کے ساتھ نہ کرو۔ اگر یہ آپ کی تکلیف، درد، پریشانی،مصیبت، یابے ہمتی کا باعث بنا ہو، تو پھر آپ اُن کے ساتھ ایسا مت کرو۔ دوسروں کے ساتھ ویسی ہی عظمت، مہربانی، پیار، عزت، اور شفقت کے ساتھ سلوک کرو جیسا کہ آپ چاہتے ہو کہ آپ کے ساتھ کیا جائے۔ یہ سمجھنے میں آسان؛ اور کرنے میں انقلابی ہے۔

Thoughts on Today's Verse...

Ah! The "Golden Rule" is so straightforward, isn't it? Sometimes we make things, especially religious things, far too complicated and complex. I love the Bible because it is so often practical and plain when God deals with our behavior. You want to know how to treat someone? Then do for them what would be a blessing if it was done to you! If it wouldn't bless, encourage, build up, support, comfort, or help you, then don't do it to them. If it would hurt, wound, depress, spite, or discourage you, then don't do it to them. Treat others with the same dignity, kindness, love, respect, and tenderness with which you would like to be treated. Simple to understand; revolutionary to do!

میری دعا

قادرِمطلق خُدا، تیرا شُکر ہو کہ تُو نے کُچھ چیزیں سمجھنے میں اتنی آسان رکھی ہیں۔ میرے دل کو اپنی محبت کے ساتھ معمور فرما کہ میں اپنے رشتوں میں "سنہری اصول" کو اپنا سکوں۔ خُداوند یسُوع کے نام میں مانگتا ہوں۔ آمین۔

My Prayer...

Almighty God, thank you for making some things so simple to understand. Please fill my heart with your love as I try to live the "Golden Rule" in my relationships. In the name of the Lord Jesus I pray. Amen.

آج کی آیت پر دعا اور خیالات فل وئیر لکھتے ہیں

Today's Verse Illustrated


Inspirational illustration of متی 7 باب 12 آیت

اظہارِ خیال