آج کی آیت پر خیالات

خاص طور پر اُن کے لیے جو اس انٹرنیٹ کے پیغام کو پڑھ سکتے ہیں، اس آیت کے جذبات غیر ملکی لگ رہے ہونگے۔ لیکن اُن کے درمیان جو کہ تنگی برداشت کر رہے ہیں، مسِیح پر ایمان رکھنے والے ابدی ہیں شاید مسیحت کی تاریخ میں عظیم ترین ظلم و ستم موجود ہے۔ ہمارے لیے جو کہ آرام دہ مقامات پر رہتے ہیں جہاں عقیدے کو برداشت کیا جاتا ہے اور جہاں مسیحی لوگوں کو چھُوا نہیں جاتا، ہمیں شکر گزار ہونا چاہیے کہ ہماری زندگیوں میں اتنا امتیاز موجود ہے کہ ہم معاشرے میں محسوس کیے جاتے ہیں، حالانکہ یہ تھوڑا تخوداجنک ہے۔ لیکن ٹھیک اُسی وقت، ہمیں تمام دنیا میں موجود ایمان داروں کے لیےدُعا کرنی چاہیے جو کہ اپنے عقیدے کے لیے جہنم کے چولہے میں جل رہے ہیں۔

میری دعا

عظیم بچانے والے، ہم میں سے بہت سے ایسے ہیں جو کہ یسُوع میں تیرے نام سے کہلاتے ہیں جو کہ روزانہ ظلم و ستم اور مشکلات برداشت کرتے ہیں۔ میں دُعا کرتا ہوں کہ وہ بے دل نہ ہوں اور اپنا اعتماد نہ کھوئیں۔ میں دعا کرتا ہوں کہ وہ اس ظلم کے وقت سے نجات حاصل کریں۔ میں دعا کرتا ہوں کہ ان کا دکھ سہنا ایک طاقت کا ذریعہ ہو تاکہ دوسرے یسُوع کی عظیم قدر اور اُس کے لیے ہماری تابعداری کو دیکھیں۔ یہ سب میں یسُوع کے قیمتی اور مقدس نام میں مانگتا ہوں۔ آمین۔

آج کی آیت پر دعا اور خیالات فل وئیر لکھتے ہیں

اظہارِ خیال